جمعرات‬‮   22   فروری‬‮   2018

بچے کھچے دہشت گرد 27لاکھ افغان مہاجرین کاسہارالے رہے ہیں،آپریشن ردالفسادسے ان کاخاتمہ کیاجارہاہے، خطے انفرادی طورپرنہیں اکٹھے ترقی کرتے ہیں

مشترکہ حکمت عملی سے تمام چیلنجزکا مقابلہ کیاجاسکتاہے،پاکستان اس حوا لے سے اپناکرداراداکرنے کوتیارہے، کابل میں چیفس آف ڈیفنس کانفرنس سے خطاب 

اسلام آباد (وقائع نگار) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے دہشت گردوں کے تمام ٹھکانے ختم کردیئے،بچے کھچے دہشت گرد 27لاکھ افغان مہاجرین کاسہارالے رہے ہیں،آپریشن ردالفسادسے بچے کھچے دہشت گردوں کاخاتمہ کیاجارہاہے،، امن واستحکام کاراستہ افغانستان سے گزرتاہے،خطے انفرادی طورپرنہیں اکٹھے ترقی کرتے ہیں،دوسرے ممالک بھی دہشتگردوں کواپنی سرزمین استعمال نہ کرنے دیں،مشترکہ حکمت عملی سے تمام چیلنجزکا مقابلہ کیاجاسکتاہے،پاکستان اس حوا لے سے ا پناکرداراداکرنے کوتیارہے۔ منگل کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر)کے مطابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کابل میں چیفس آف ڈیفنس کانفرنس میں شرکت کی، کانفرنس کے اعلامیہ کے مطابق خطے میں امن و استحکام کیلئے تعاون جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کانفرنس سے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ خطے کے امن و استحکام کا راستہ افغانستان سے گزرتا ہے، پاکستان نے دہشت گردوں کے ٹھکانے ختم کر دیئے ہیں، کچھ عناصر افغان مہاجروں اور غیر موثر سرحدی انتظامات کا فائدہ اٹھا رہے ہیں،بچے کھچے دہشت گرد عناصر کے خاتمہ کیلئے آپریشن ردالفساد جاری ہے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاکستان کسی بھی ملک کے خلاف اپنی سرزمین استعمال نہیں ہونے دے گا اور پاکستان ہمسائیہ ممالک سے بھی اسی عزم کی امید رکھتا ہے، چیلنجز سے نمٹنے کیلئے مشترکہ کاوشوں کی ضرورت ہے، پاکستان اپنا کردار ادا کرنے کیلئے ہمہ وقت تیار ہے۔کانفرنس میں امریکی کمانڈرسینیٹ کام ،چیف آف آرمی سٹاف افغانستان ،کرغزستان،قزقستان،تاجکستان، ترکمانستان اورازبکستان بھی موجود تھے۔ 

© Copyright 2018. All right Reserved