اتوار‬‮   27   مئی‬‮   2018

نواز شریف ،مریم نواز کو باہر جانے سے روکا جائے،نیب

نوازشریف،مریم،کیپٹن صفدر ملزمان، عدالت میں مقدمات زیرسماعت ہیں، بیرون ملک فرار ہونے کا خدشہ ہے ،نیب کا خط ، عدالتی حکم پر ہی نام ای سی ایل میں ڈالیں گے،وزارت داخلہ کاجواب 
اسلام آباد ( خصوصی نیوز رپورٹر،نیوزایجنسی) نیب نے وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے نام ای سی ایل میںڈالنے کے لئے وزارت داخلہ کو سفارش کر دی جبکہ وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ عدالتی حکم پر ہی نام ای سی ایل میں ڈالیں گے ۔نیب کی جانب سے سابق وزیر اعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کے لئے وزارت داخلہ کو مراسلے بھجوا دیئے گئے ہیں۔ نیب کی جانب سے وزارت داخلہ کو دو الگ الگ مراسلے بھجوائے گئے ہیں، ایک مراسلے میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی سفارش کی گئی ہے جب کہ دوسرے میں ان کی بیٹی مریم نواز اور داماد کیپٹن ( ر) صفدر کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کرنے کے لیے کہا گیا ہے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ تینوں افراد نیب کے ملزمان ہیں اور ان کے خلاف احتساب عدالت میں مقدمات زیر سماعت ہیں، ملزمان کے بیرون ملک فرار ہونے کا خدشہ ہے اس لیے ان ملزمان کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے، نیب کی طرف سے لکھے گئے خط کے ساتھ تینوں افراد کے خلاف عدالتوں میں زیر سماعت مقدمات کی تفصیل لگائی گئی ہے۔ جبکہ وزارت داخلہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ نام عدالتی حکم پر ہی ای سی ایل میں ڈالیں گے ۔
نیب،سفارش



اسلام آباد ( خصوصی نیوز رپورٹر) نیب کی جانب سے اسلام آباد کی احتساب عدالت میں نیب فلیگ شپ انویسٹمنٹ اور العزیزیہ اسٹیل ملز سے متعلق ضمنی ریفرنسز)
دائر کیے گئے ہیں۔ نیب نے دونوں ضمنی ریفرنسز میں 8،8 نئے گواہ شامل کیے ہیں دونوں ریفرنسز میں نواز شریف سمیت ان کے صاحبزادے حسن اور حسین نواز بھی ملزم نامزد ہیں۔ حسن اور حسین نواز کی آف شور کمپنیوں کی نئی تفصیلات بھی ضمنی ریفرنسز کا حصہ ہیں۔ ایون فیلڈ پراپرٹیز ریفرنس: نواز شریف سمیت 5 ملزمان کیخلاف ضمنی ریفرنس دائر کئے گئے ہیں ۔جبکہ ادھر احتساب عدالت نے سابق وزیر خزانہ کے خلاف دائر زائد اثاثہ جات ریفرنس میں ایک اور ضمنی ریفرنس دائر کرنے کی استدعا منظور کرتے ہوئے کیس کی سماعت 23 فروری تک ملتوی کردی ہے۔ اسلام آباد کی احتساب عدالت میں سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت وقفے کے بعد دوبارہ شروع ہوئی، جج محمد بشیر نے کیس کی سماعت کی۔اس موقع پر نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ نیب نے اسحاق ڈار کے خلاف ایک ضمنی ریفرنس دائر کرنا ہے، لہذا عدالت اس کی اجازت دے، نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ مذکورہ ریفرنس تفتیشی افسرنادر عباس نے تیار کیا ہے۔جس پر احتساب عدالت نے پراسیکیوٹر کی درخواست منظور کرتے ہوئے کہا کہ 23 فروری کو نیب ضمنی ریفرنس پر گواہان کے بیانات کے ساتھ ہی نادر عباس کا بیان بھی ریکارڈ کرا دیا جائے گا۔ بعد ازاں کیس کی سماعت تئیس فروری تک ملتوی کردی گئی ہے۔


loading...
© Copyright 2018. All right Reserved