اتوار‬‮   24   جون‬‮   2018

زیادتی واقعات کی روک تھام کرنا ہو گی، مریم اورنگزیب

اسلام آباد (وقائع نگار ) وزیر مملکت برائے اطلاعات، نشریات، قومی تاریخ و ادبی ورثہ مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ معاشرے میں بچوں سے زیادتی کے واقعات کیروک تھام کیلئے اجتماعی کوششوں کی ضرورت ہے، میڈیا کو اس سے متعلق والدین اور بچوں میں آگاہی پیدا کرنے کیلئے اپنا قومی فرض ادا کرنا چاہئے،پنجاب حکومت نے انفارمیشن ٹیکنالوجی پر مبنی نظام وضع اور فرانزک لیبارٹری قائم کی ہے جس سے دوسرے صوبے بھی استفادہ کر رہے ہیں ، زینب اور عاصمہ کیس نے ہماری آنکھیں کھول دی ہیں، تمام اسمبلیوں نے اس حوالے سے قانون سازی کیلئے کام شروع کر دیا ہے، سپیکر قومی اسمبلی کی قائم کردہ چائلڈ پروٹیکشن کمیٹی موجودہ قوانین، لیگل فریم ورک اور قواعد و ضوابط میں مثر بہتری کیلئے ان کا جائزہ لے کر 30 دن میں اپنی سفارشات پیش کرے گی، وفاق اور صوبوں میں پائیدار ترقیاتی اہداف (ایس ڈی جیز) سے متعلق ٹاسک فورس کام کر رہیں ہیں، یونیسیف پاکستان میں تعلیم اور صحت کے شعبوں میں بہتری لانے میں شراکت دار ہے ۔ وہ منگل کو یہاں یونیسیف کے زیراہتمام پاکستان میں چائلڈ پروٹیکشن، کیس مینجمنٹ اور ریفرل سسٹم کے موضوع پر ورکشاپ سے مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کر رہی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ بچوں سے زیادتی کے واقعات کی روک تھام کے لئے حکومت کے ساتھ ساتھ معاشرتی رویے تبدیل کرنے، سول سوسائٹی اور میڈیا سمیت تمام متعلقہ فریقوں کی اجتماعی سوچ اور کوششوں کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ سپیکر قومی اسمبلی نے چائلڈ پروٹیکشن سے متعلق کمیٹی قائم کی ہے جو اس حوالے سے آئین سازی کیلئے 30 دن میں اپنی سفارشات پیش کرے گی 


loading...
© Copyright 2018. All right Reserved