جمعہ‬‮   21   ستمبر‬‮   2018

سی ڈی اے کے 3سابق ڈائریکٹر ز مالک صفا گولڈ مال کیخلاف بد عنوانی ریفرنس کی منظوری

اسلام آباد ( خصوصی نیوز رپورٹر) قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس قومی احتساب بیورو کے چئیرمین جسٹس جاوید اقبال کی زیرصدارت نیب ہیڈکوارٹر ز اسلام آبادمیں منعقد ہوا جس میں مندرجہ ذیل فیصلے کئے گئے ۔نیب کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے غلام مر تضی ملک سابق ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل بلڈنگ کنٹرول سیکشن سی ڈی اے، خلیل احمدسابق ڈائریکٹر بلڈنگ کنٹرول سیکشن سی ڈی اے،محمد عمار ادریس سابق ڈپٹی ڈائریکٹر بلڈنگ کنٹرول سیکشن سی ڈی اے،خادم حسین سابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر بلڈنگ کنٹرول سیکشن سی ڈی اے اوررانا عبدالقیوم مالک صفاء گولڈ مال کے خلاف بدعنوانی کا ریفرنس دائرکرنے کی منظوری دی ۔ ملزمان پر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے صفاء گولڈ مال ایف سیون اسلام آباد پلازہ کی اضافی منزلوں کی تعمیر کیلئے غیرقانونی طورپر نظرثانی شدہ عمارت کے نقشہ کی منظوری دینے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کوبھاری نقصان پہنچا۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے طارق حیات خان، سابق ڈائریکٹر جنرل گلیات ڈویلپمینٹ اتھارٹی اور دیگر کے خلاف بدعنوانی کا ریفرنس دائرکرنے کی منظوری دی ۔ ملزمان پر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے گلیات ڈویلپمینٹ اتھارٹی کی قیمتی زمین کو غیرقانونی طورپر الاٹ کرنے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو90ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے حامد لطیف رانا، سابق مینجنگ ڈائریکٹر واٹر اینڈ سینیٹیشن ایجنسی اور دیگرکے خلاف بدعنوانی کا ر یفرنس دائرکرنے کی منظوری دی ۔ ملزمان پر آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 337ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ایگزیکٹو بورڈنے لیفٹینینٹ جنرل ریٹائرڈ محمد افضل جنجوعہ،بریگیڈئیر ریٹائرڈ افتخار مہدی ،محفوظ علی خان سابق سیکرٹری خزانہ حکومت بلوچستان، میسرز اللہ ھو ہولڈنگ لمیٹڈ کے ڈائریکٹرز ، یونائیٹڈ انشورنس کمپنی آف پاکستان لمیٹڈ کے ڈائریکٹرز اور بلوچستان حکومت کے افسران اور اہلکاران اور دیگرکے خلاف انویسٹی گیشن کی منظوری دی۔ ملزمان پر اختیارات کا ناجائز استعمال اور سرکاری فنڈز میں خردبردکرنے کا الزام ہے۔جس سے قومی خزانے کو 243.640ملین روپے کا نقصان پہنچا


© Copyright 2018. All right Reserved