اتوار‬‮   23   ستمبر‬‮   2018

قومی اسمبلی وزرا کی غیر حاضری افسران کی عدم دلچسپی سپیکر کا واک آؤٹ

اسلام آباد ( نامہ نگار خصوصی) سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے وفاقی وزیر داخلہ ،سیکر ٹری داخلہ اور دیگر وزارت داخلہ کے عہدیداران کی ایوان میں عدم حاضر پر احتجاجاً واک کر گئے،سپیکر کیساتھ تحریک انصاف کے ارکان نے بھی واک آؤٹ کیا۔ سردار ایاز صادق کا کہنا تھا کہ وزارت داخلہ سے متعلق وفاقی وزیر، ایک وزیر مملکت اور ایک پارلیمانی سیکرٹری ہونے کے باوجود ایوان کی کارروائی کو مذاق بنایا ہوا ہے،پارلیمنٹ کی بے توقیری مجھے سے برداشت نہیں۔ سپیکر قومی اسمبلی نے وزیر اعظم کی جانب سے وزراء اور وزارتوں کے حکام کی ایوان میں حاضری کیلئے تحریری یقین دہانی تک روزانہ ایوان سے واک آؤٹ کی دھمکی دیدی۔منگل کو قومی اسمبلی اجلاس میں پاکستان تحریک انصاف کے ارکان کی جانب سے توجہ دلاؤ نوٹس پیش کرنے سے قبل سپیکر ایاز صادق نے استفار کیا کہ توجہ دلاؤ نوٹس کا جواب کون دے گا،مگر ایوان میں وفاقی وزیر داخلہ ، وزیر مملکت داخلہ اور پارلیمانی سیکرٹری برائے داخلہ میں سے کوئی بھی ایوان میں توجہ دلاؤ نوٹس کا جواب دینے کیلئے موجود نہیں تھا ۔وزارت داخلہ کی جانب سے گیلری میں بھی سیکر ٹری یا ایڈیشنل سیکرٹری موجود نہ ہونے پرایاز صادق نے برہمی کا اظپار کرتے ہوئے کہا کہ وزارت داخلہ کا کوئی نائب قاصد بھی نہیں آیا کیا؟ سپیکر نے وزارت داخلہ حکام کو طلب کرتے ہوئے ان کے آنے تک ایوان کی کارروائی ملتوی کر دی۔ تاہم کچھ دیر بعد دوبارہ اجلاس شروع ہونے پر سردار ایاز صادق نے کہا کہ وزارتِ داخلہ کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ پارلیمانی سیکرٹری ساڑھے 12 بجے سے پہلے نہیں آسکتے، ایک وفاقی وزیر، ایک وزیر مملکت اور ایک پارلیمانی سیکرٹری ہونے کے باوجود ایوان کی کارروائی کو مذاق بنایا ہوا ہے، جب تک وزیراعظم شاہد خاقان عباسی تحریری طور پر ضمانت نہیں دیں گے میں روزانہ واک آؤٹ کروں گا۔ پارلیمنٹ کی بے توقیری مجھے سے برداشت نہیں 


© Copyright 2018. All right Reserved