اتوار‬‮   27   مئی‬‮   2018

گورنر سٹیٹ بینک تعیناتی، درخواست گزاروں کے وکیل کو دلائل دینے کی ہدایت


اسلام آباد ( خصوصی نیوز رپورٹر ) اسلام آباد ہائی کورٹ نے گورنر سٹیٹ بینک طارق باجوہ کی تعیناتی کے خلاف دائر درخواست پر درخواست گزاروں کے وکیل کو دلائل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت آج تک ملتوی کر دی ۔ منگل کو سینیٹر تاج حیدر سمیت 22 سینیٹرز کی جانب سے گورنر سٹیٹ بینک طارق باجوہ کی تعیناتی کے خلاف دائر درخواست کی سماعت جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے کی تو درخواست گزاروں کی جانب سے لطیف کھوسہ ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے ، طارق باجوہ کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سٹیٹ بنک اور پاکستان ایکٹ کے تحت طارق باجوہ کی تعیناتی عمل میں لائی گئی، آئین کے مطابق گورنر اسٹیٹ بنک کی تقرری کی گئی ، لطیف کھوسہ نے موقف اختیار کیا کہ گورنر اسٹیٹ بنک کی تقرری آئینی طور پر صدر پاکستان نہیں کر سکتے ، اٹھارویں ترمیم کے بعد گورنر سٹیٹ بنک کی تقرری وزیراعظم یا کیبنٹ ڈویژن کا اختیار ہے، گورنر سٹیٹ بنک کی تقرری میں مسابقتی عمل کو نظرانداز کیا گیا ، لطیف کھوسہ نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت غیر قانونی طور پر تعینات گورنر سٹیٹ بنک کی تقرری کو کالعدم قرار دے، گورنر اسٹیٹ بنک کے دلائل مکمل ہونے پر فاضل جسٹس نے لطیف کھوسہ کو جوابی دلائل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت آج تک ملتوی کر دی ۔ 
ہدایت


loading...
© Copyright 2018. All right Reserved