بدھ‬‮   12   دسمبر‬‮   2018

عوامی نیشنل پارٹی نے پولنگ سٹیشن کے اندر فوج تعیناتی کی مخالفت کر دی


تین کالم۔۔عوامی نیشنل پارٹی نے پولنگ سٹیشن کے اندر فوج تعیناتی کی مخالفت کر دی
الیکشن ایکٹ 2017ء میں فوج کو بلانے پربھی وہ پولنگ سٹیشن کے اندر اپنے فرائض سرانجام نہیں دے سکتے
فورسز کو سکیورٹی کیلئے پولنگ سٹیشنز کے باہر تعینات کیا جائے، قوم کے فیصلے کو تسلیم کیاجائے،غلام احمد بلور کی پریس کانفرنس
پشاور(بیورورپورٹ)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما غلام احمدبلور نے کہاہے کہ ضمنی انتخابات کے دوران فوج کو پولنگ سٹیشن کے اندرنہیں باہرتعینات کیاجائے کیونکہ الیکشن ایکٹ 2017ء میں فوج کو بلانے پربھی وہ پولنگ سٹیشن کے اندر اپنے فرائض سرانجام نہیں دے سکتے۔ضمنی انتخابات کے موقع پر ادارے کے بجائے قوم کے فیصلے کو تسلیم کیاجائے تو جمہوریت کو استحکام حاصل ہوگا۔وہ بلورہائوس پشاورمیں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔اس موقع پر پاکستان پیپلزپارٹی،جمعیت علماء اسلام،قومی وطن پارٹی اور مسلم لیگ ن کے رہنمائوں نے غلام بلورکویقین دلایاکہ وہ انتخابی مہم کے علاوہ انتخابات کے دن بلورخاندان کے حق میں اپناحق رائے دہی استعمال کرینگے اور ہارون بلور کی اہلیہ ثمربلورکوہرحال میں کامیاب کرائینگے۔غلام احمدبلور نے کہاکہ الیکشن ایکٹ2017ء میں فوج کی تعیناتی ضرورت پڑنے پرہوتی ہے 25جولائی کو انتخابات کے دوران فوج کی تعیناتی کے نتائج سب کے سامنے ہیں اپوزیشن جماعتوں نے وہی ووٹ حاصل کئے جو ماضی میں ان کے کامیابی کاسبب بنے تھے لیکن ہمارے ہزاروں ووٹوں کے مقابلے میں بلے کو لاکھوں ووٹ ملے حیران کن امریہ ہے کہ ووٹ آئے کہاں سے ؟۔فوج کی ذمہ داری ہے کہ وہ عوام کے اعتمادپرپورااترے عوام کاحق ہے کہ جسے کامیاب کرائے یا جسے ناکام،ضمنی انتخابات کے دوران تمام اپوزیشن جماعتوں نے اے این پی کے امیدوارپراعتماد کااظہار کرتے ہوئے اتحادکامظاہرہ کیاہے توقع ہے کہ اپوزیشن کے اراکین بھی گھروں سے نکل کرلالٹین کو ووٹ دینگے انہوں نے کہاکہ عمران خان نے ہارون بلور کی شہادت کے بعد بلورخاندان کے امیدوار کو بلامقابلہ کامیاب کرانے کی بات کی تھی لیکن وہ اب اپنی بات سے مکرگئے ہیں انہوں نے شہبازشریف کی گرفتاری کی مذمت کی ۔
اے این پی

© Copyright 2018. All right Reserved