بدھ‬‮   12   دسمبر‬‮   2018

باجوہ کی موجودگی میں جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں،جنرل(ر) خالد نعیم لودھی


دو کالم،،،،،،،،،،،،،
باجوہ کی موجودگی میں جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں،جنرل(ر) خالد نعیم لودھی
فوج میں اعلی سطح پر نئی تقرریاں طے شدہ فارمولے اور موثر نؓام کے تحت ہوئی ہیں
حکومت کو عوام کی توقعات پر پورا اترنا ہوگا، سابق نگران وزیر دفاع کی اوصاف سے بات چیت
اسلام آباد ( جاوید شہزاد سے ) سابق نگران وزیر دفاع لیفٹیننٹ جنرل(ر) خالد نعیم لودھی نے کہا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی موجودگی میں پارلیمانی جمہوری نظام کو کوئی خطرات لاحق نہیں ہوسکتے ہیں کیوں کہ جنرل باجورہ پہلے دن سے ہی جمہوریت کے پرجوش حامی تھے اور ہیں انکی لا فل کمانڈ کے دوران جمہوریت ڈی ریل ہونے کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا اور یہ بات طے شدہ ہے کہ جنرل باجوہ کے دور میں جمہوری کو آگے ہی بڑھںا ہے, ڈی جی آئی ایس آئی سمیت فوج میں اعلی سطح پر نئی تقرریاں فوج کے ایک طے شدہ فارمولے اور موثر نؓام کے تحت ہوئی ہیں, فوج میں افسران کی ترقیوں اور تقرر کا ایک ایسا موثر نظام موجود ہے جس میں قابل اور باصیؒلاحیت افسران اپنی اپنی پیشہ وارانہ کارکردگی اور آپریشنل مہارت کی بدولت ہی آگے آتے ہیں, سول سروسز کی طرح فوج مجاذاتھارٹی اپنی مرضی سے ترقی اور تقرر نہیں ہوتا، نئے ڈی جی آئی ایس آئی اپنے انٹیلی جنس تجربے کی بدولت ادارے اور اس کی پالیسوں کو عصر حاضر کے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرسکیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اوصاف سے بات جیت کے دوران کیا۔سابق نگران وزیر دفاع لیفٹیننٹ جنرل(ر) خالد نعیم لودھی نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کو قوم نے جو مینڈیٹ دیا ہے وہ اس بات کی عکاسی کرتا ہے کہ پاکستان کو بحرانوں سے نکالا جائے اور عوام کے مسائل حل کئے جائیں، اس کیلئے وزیر اعظم اور انکی کابینہ کو اپنے تمام وسائل اور صیلاحیتوں کو بروئے کار لانا ہوگا عوام نے ملک اور اپنی تقدیر بدلنے کیلئے پی ٹی آئی پر اپنے جس بھر پور اعتماد کا اظہار کیا ہے حکومت کو انکی توقعات پر پورا اترنا ہوگا ،انکا کہنا تھا کہ باجوہ جب آرمی چیف نہیں بنے تھے اور تھری اور ٹو سٹار کے جب جنرل تھے تو اس وقت بھی جنرل باجوہ جمہوریت کے پر جوش حامی ہوا کرتے تھے اور انھوں نے بطور آرمی چیف بھی جمہوریت کی ہمیشہ حمایت کی ہے اس لئے جمہور کو کسی اطراف سے کوئی خطرات نہیں ہیں اور پارلیمانی جمہوری نظام نے اب مزید پروان چڑھنا ہے ۔
خالد نعیم



© Copyright 2018. All right Reserved