بدھ‬‮   19   دسمبر‬‮   2018

خیبر پختونخوا سروس ٹربیونل میں جونئیر افسران کی پیشی پر پابندی عائد

گریڈ 16سے اوپر کے افسران ہی معاونت کیلئے بھیجے جائیں، ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل

پشاور ( بیورو رپورٹ ) خیبر پختونخوا سروس ٹربیونل کے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل کبیر اللہ خٹک نے ٹربیونل میں صوبائی محکمہ جات کے خلاف زیر سماعت کیسز میں گورنمنٹ پلیڈر ز اور ایڈیشنل اور اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرلز کی پیروی میں معاونت کے لیے گریڈ17 سے کم اہلکار وں کو ٹربیونل میں پیش نہ کرنے کے لیے چیف سیکرٹری سمیت تمام صوبائی محکمہ جات کو خط لکھ دیا ہے ۔ خط میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ٹربیونل میں اکثر کیسز میں صوبائی محکموں کی جانب سے لوئر گریڈ کے اہلکاروں کو گورنمنٹ پلیڈرز، ایڈیشنل اور اسسٹنٹ ایڈوکیٹ جنرلز کی پیروی میں معاونت کے بھیجتے ہیں جو غیر متعلقہ ہوتے ہیں اور وہ دوران سماعت گورنمنٹ پلیڈرز، ایڈیشنل اور اسسٹنٹ ایڈوکیٹ جنرلز کی صحیح معاونت نہیں کر پاتے جس سے کیسز متاثر ہونے کا خدشہ ہوتا ہے ،لہذا چیف سیکرٹری تمام متعلقہ صوبائی محکمہ جات کے اعلی حکام کو اس کے پابند بنائے کہ وہ ٹربیونل میں سماعت کے لیے 17گریڈ سے کم سکیل کے اہلکار نہ بھیجیں تاکہ سرکاری ڈیپارمنٹس کے خلاف کیسز میں گورنمنٹ پلیڈرز اور ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل کی صحیح معاونت ممکن ہوسکے، گورنمنٹ کی صحیح پیروی ہو سکے ۔ 
سروس ٹربیونل

© Copyright 2018. All right Reserved