بدھ‬‮   19   دسمبر‬‮   2018

ایل او سی ٹریڈرز کو درپیش مسائل کے حل کے لیے وزیراعظم ،وزیر خارجہ سے بات کروںگا،وزیر امور کشمیر

مسئلہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بھی اٹھایا جائیگا، ایل او سی ٹریڈ اینڈٹریول سے جموں و کشمیر کے عوام کے رشتے مضبوط ہوئے
وفاقی حکومت آزاد کشمیر میں تعمیر وترقی کیلئے بھی بھر پور وسائل فراہم کرے گی ، علی امین خان گنڈا پور کی تاجروں کےوفد سے گفتگو
ہٹیاں بالا (بیورورپورٹ) وفاقی وزیر امور کشمیر علی امین خان گنڈا پور نے کہا ہے کہ ایل او سی ٹریڈ اور ٹریول سے منقسم ریاست جموں و کشمیر کے عوام کے درمیان رشتے مضبوط ہوئے ایل او سی ٹریڈرز کو پاکستان کسٹم کی جانب سے درپیش مسائل کے حل کے لیے وزیراعظم پاکستان عمران خان ،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے بات کروںگا اور یہ مسئلہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں اٹھاؤں گا ۔ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر امور کشمیر علی امین خان گنڈا پور نے ایل او سی ٹریڈرز کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ وفد میں چکوٹھی اور تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ کے سینئر ایل او سی تاجر سردار قضیم ،محمد اشرف ڈار،سردار وحید انور ،اعجاز احمد میر،سردار انصار ،چوہدری منیر،اسد مسعوداورمرزا شکیل شامل تھے ۔ایل او سی ٹریڈرزنے تقریبا ایک گھنٹہ تک ان سے ملاقات کے دوران بتایا کہ جنرل (ر) پرویز مشرف کے دور حکومت میں سرینگر مظفرآباد کے درمیان ٹریول اور آصف علی زرداری کے دور حکومت میں منقسم کشمیریوں کے درمیان تعلقات قائم کرنے کے لیے آر پار تجارت شروع کی گئی پاکستان کسٹم کی جانب سے آئے روز مقبوضہ جموں و کشمیر سے آنے والے مالوں سے لوڈ ٹرکوں کی پکڑ دھکڑ سے دونوں اطراف کے تاجروں کا معاشی قتل ہو رہا ہے کسٹم کی ان کارروائیوں کے باعث سرینگر مظفرآباد اور راولاکوٹ پونچھ کے درمیان ہونے والی تجارت دن بدن بند ہو نے کی طرف بڑھ رہی ہے جو آر پار کے عوام کے درمیان تعلقات قائم رکھنے کا واحد ذریعہ ہے تاجر درجنوں مرتبہ اس مسئلہ کے حل کے لیے حکام بالا سے مطالبے کر چکے ہیں لیکن آج تک کسی نے بھی اس مسئلہ کے حل کی طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔دونوں اطراف کے تاجروں کو پی ٹی آئی کی حکومت اور وزیراعظم عمران خان سے یہ توقعات ہیں کہ وہ اس مسئلے کو مستقل بنیادوں پر حل کروائیں گے تانکہ منقسم ریاست جموں و کشمیر کے عوام کے درمیان قائم ہونے والے تعلقات میں کمی کے بجائے اضافہ ممکن ہو اگر قانو نا ایل او سی تجارت پر کسٹم عائد ہوتا ہے تو تاجر وہ بھی دینے کے لیے تیار ہیں اس کے لیے ایف بی آر کوہالہ اور آزاد پتن کے مقامات پر کسٹم چیک پوسٹ قائم کرے جہاں پر تاجر کسٹم کی ادائیگی کے بعد اپنے ٹرکوں کو پاکستانی منڈیوں تک با آسانی لے جا سکیں۔
اس موقع پر وفاقی وزیر امور کشمیر علی امین خان گنڈا پور نے ایل او سی ٹریڈرز کو یقین دہانی کروائی کہ وہ اس مسئلہ کے حل کی بھر پور کوشش کریں گے وزیراعظم پاکستان عمران خان ،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے بات کرنے کے علاوہ اس مسئلہ کو آئندہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بھی اٹھایا جائے گا۔وزیر امور کشمیر نے مزید کہا کہ وفاقی حکومت آزاد کشمیر میں سیاحت کے فروغ اور دیگر تعمیر وترقی کے لیے بھی بھر پور وسائل فراہم کرے گی تا کہ آزاد کشمیر کی عوام کی محرومیوں کا ازالہ ممکن ہوآزاد کشمیر کے عوام نے بھی اس سے قبل مشکل حالات کا سامنا کیا اس کے باوجود ان کے دلوں میں پاکستان کے لیے دن بدن محبت میں اضافہ ہوا انشاء اللہ وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں آزاد کشمیر کے عوام کی تمام محرومیوں کا ازالہ کیا جائے گا اس موقعہ پر ایل او سی ٹریڈرز نے کسٹم پاکستان کی جانب سے مقبوضہ کشمیر سے آنے والے مالوں کی پکڑ دھکڑ کا مسئلہ ترجیع بنیادوں پر حل کروانے کی یقین دہانی پر وزیر امور کشمیر کا شکریہ ادا کیا ۔
وزیر امور کشمیر

© Copyright 2018. All right Reserved