بدھ‬‮   19   دسمبر‬‮   2018

تعمیر و ترقی اور مسئلہ کشمیر کا حل حکومت کی ترجیحات ہیں ،میر اکبر


ڈبل
تعمیر و ترقی اور مسئلہ کشمیر کا حل حکومت کی ترجیحات ہیں ،میر اکبر
سی پیک سے ترقی کا نیا باب شروع ہوجائے گا اور بے روزگاری کا خاتمہ ہو گا
مظفرآباد(سٹی رپورٹر)وزیر جنگلات آزاد کشمیرسردار میر اکبر خان نے کہا ہے کہ آزادکشمیر میں تعمیر وترقی ،گڈ گورننس اور مسئلہ کشمیر مسلم لیگ ن حکومت کی ترجیحات ہیں خطہ کو مثالی ریاست بنایا جائے گا وزیر اعظم پاکستا ن میاں محمد نواز شریف کااقتصادی پیکج سی پیک سے آزادکشمیر میں تعمیر وترقی کا نیا باب شروع ہوجائے گا اور آزادکشمیر میں بے روزگاری کا خاتمہ ہو گاموجودہ حکومت وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی سربراہی میں گڈ گورننس میرٹ کی بحالی اداروں میں کرپشن کے خا تمے اور مسئلہ کشمیر پر دن رات کام کررہی ہے آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر ساری ریاست 86ہزار مربع میل کی نمائندہ حکومت ہے ۔ شہداء کی قر بانیاں رنگ لائیں گی جنگ بندی لائن پر بسنے والوں پر بھارت کی طرف سے بلا جواز اور اشتعال انگیز فائرنگ قابل مذمت ہے حکومت متاثرین بھارتی فائرنگ کی مدد کے لئے فنڈز قائم کرے گی بھارت فوج مقبوضہ کشمیر میں ایک قابض اور جاڑح کے طور پر موجود ہے جبکہ پاکستان کی فوج آزاد کشمیر میں ہماری حفاظت کے لئے ہے پاکستان اور ہندوستان کے وزراء اعظم کے درمیان مذاکرات کا پائیدار اس وقت تک نہیں ہو سکتے جب تک کشمیر اس میں شامل نہ ہوں مسلم لیگ ن کی حکومت نے تمام محکموں کے اندر کرپشن کے خاتمے کے لیے اصطلاحات کا عمل شروع کردیا گیا ہے این ٹی ایس کے ذریعہ اہل اور قابل افراد میرٹ کے ذریعہ تعینات کررہے ہیں اس سے آنے والی نسلوں کو فائدہ پہنچے گا آزادکشمیر میں تعمیر وترقی کے ثمرات جلد عوام کے سامنے آنا شروع ہوجائینگے ان خیالا ت کا اظہار انھوں نے آج مظفرآباد آفس چیمبر میں میڈیا نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا مسئلہ کشمیر اور مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے متعلق قرار دار پر اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کرتار پور راہداری کھولنے کے فیصلے کی حمایت کرتے ہیںاورمقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کی مذمت کی کرتے ہوئے کہا کہ جب تک بھارت کشمیریوں کو اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق حق نہیں دیتا خطہ میں امن قائم نہیں ہو سکتا گلگت بلتستان کو پاکستان کا صوبہ بنانے کے حوالے سے قرار داد پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر اعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا کہ جب گلگت بلتستان کا عارضی انتظام حکومت پاکستان کو دیا گیا تو آزاد کشمیر اس میں شامل تھا اب بھی اس معاملے میں آزادکشمیر کی سیاسی قیادت کو اعتماد میں لیاجائے گلگت بلتستان کے لوگوں نے 1947میں نامساعد حالات میں ڈوگرہ کے خلاف جنگ لڑی اور 28ہزار مربع میل کا علاقہ آزاد کر دیا انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان کے لوگوں کو حقوق بھی دیے جائیں اور مسئلہ کشمیر متاثر بھی نہ ہو انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کا مستقبل پاکستان سے وابستہ ہے انھوںنے کہا کہ بیس کیمپ میںرہنے والے افراد کی یہ اولین ذمہ دار ی کہ وہ مظلو م کشمیریوں پر ہونے والے بھارتی مظالم کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے میں اپنا موثر کردارادا کریں اور ہر فورم پر کشمیر ی اور بیرون مقیم کشمیری بھارت کی عالمی ریاستی دہشت گردی کو بے نقاب کرکے بھارت کا اصل چہر ہ دنیا کے سامنے لائے انھوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک عالمی مسئلہ ہے جو کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں میں منظور شدہ مسئلہ ہے اقوام متحدہ سمیت دیگر اسلامی ممالک کو اس مسئلہ کے حل کے لیے اپنا موثر کردار ادا کرنا ہو گا اور بھارت پر دبائو ڈالنا ہوگا
میراکبر

© Copyright 2018. All right Reserved