بدھ‬‮   19   دسمبر‬‮   2018

گیپکو میں غیر قانونی بھر تیاں،پرویز اشرف کی حاضری معافی کی درخواست منظور

احتساب عدالت نے گواہان کو طلب کرتے ہوئےسماعت 17 دسمبر تک ملتوی کر دی
لاہور (نیوز ایجنسیاں) احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے خلاف گیپکو میں غیر قانونی بھرتیوں کیس پر سماعت کرتے ہوئے راجہ پرویز اشرف کی حاضری معافی کی درخواست منظورکر لی۔احتساب عدالت کے جج نجم الحسن نے گواہان کو طلب کرتے ہوئے کیس پر سماعت 17 دسمبر تک ملتوی کر دی۔ عدالت نے بیانات قلمبند کرنے کے لئے گواہان کو طلب کررکھا تھا۔ ایک گواہ پر جزوی جرح مکمل کر لی گئی ہے۔ نیب نے گیپکو میں غیر قانونی بھرتیوں کے کرپشن ریفرنس میں راجہ پرویزاشرف سمیت 8 ملزمان کو نامزدکررکھاہے۔ نیب حکام کا کہنا ہے کہ راجہ پرویزاشرف نے ایسے افراد کو نوکریاں فراہم کیں جنھوں نے درخواستیں ہی نہیں دی تھیں۔ میرٹ کی دھجیاں بکھیر کر نااہل افرادکو سیاسی طور پر نوازاہے۔ تحریری امتحان اور ڈومیسائل کی پالیسی کی خلاف ورزی کی گئی۔ پرویز اشرف نے صرف اپنا ووٹ بنک مضبوط بنانے کیلئے اپنے حلقے کے ووٹرزکونوازتے ہوئے اہل افرادکو ان کے جائز حق سے محروم کیا۔ ریفرنس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف اورسابق ایم ڈی پیپکو طاہربشارت چیمہ کو نامزدکیاگیاہے۔ سابق سیکرٹری وزارت پانی و بجلی شاہد رفیع، سابق ڈائریکٹرز بورڈ آف گورنرز محمد سلیم عارف، ملک محمد رضی عباس اور وزیرعلی بھی ملزمان میں شامل ہیں۔ سابق سی ای اومحمد ابراہیم مجو کہ اور سابق ڈائریکٹر ایچ آرحشمت علی کاظمی بھی کرپشن ریفرنس میں ملزمان ہیں۔ راجہ پرویز اشرف پر 437 افراد کو غیرقانونی طور پر بھرتی کرنے کا الزام ہے۔ نیب نے سابق وزیراعظم کے خلاف احتساب عدالت میں 2016 میں ریفرنس دائر کیا تھا۔
پرویز اشرف، معافی

© Copyright 2018. All right Reserved